Monday, July 5, 2010

Zahid Ne Mera Hausla-e-Imaan Nahin Dekha - زاہد نے میرا حاصل ایماں‌ نہیں دیکھا


زاہد نے میرا حاصل ایماں‌ نہیں دیکھا
رخ پر تیری زلفوں کو پریشاں نہیں‌ دیکھا


ہر حال میں‌ بس پیش نظر ہے وہی صورت
میں‌ نے کبھی رو ء شبِ ہجراں نہیں‌ دیکھا


آئے تھے سبھی طرح کے جلوے میرے آگے
میں نے مگر اے دیدہء حیراں نہیں دیکھا


کیا کیا ہوا ہنگامہ جنوں یہ نہیں معلوم
کچھ ہوش جو آیا تو غریباں نہیں‌ دیکھا
---

Zahid ne mera hausla e imaan nahin dekha
Rukh pe teri zulfon ko pareshaan nahin dekha

Har haal mein bas pesh-e-nazar hai wohi soorat
Mene kabhi roo-e-shab-e-hijran nahin dekha

Rukh par teri zulfon ko pareshaan nahin dekha
Zahid ne mera haasil e eemaan nahin dekha

Aye thay sabhi tarhaa ke jalway mere aage,
Meine magar ae deeda-e-heraan nahin dekha

Kya kya hua hungaam-e-junoon yeh nahi maloom
Kuch hosh jo aya to garebaan nahin dekha

Note: Abida has beautifully added a few relevant verses of Kabir in this rendition

1 comment:

Y2U said...

I guess this is
"Zahid ne mera hausla-e-Emaan nahin dekha"